جی سی یونیورسٹی نے میٹھے کے استعمال پر پابندی عائد کردی

لاہور: جی سی یونیورسٹی  انتظامیہ نے میٹھے کے استعمال پر پابندی عائد کردی ہے، صحت مند  دماغ کیلئے صحت مند جسم ہونا لازم ہے۔ یونیورسٹی کی جانب سےنوٹیفکیشن جاری

تفصیلات کے مطابق   گورنمنٹ  کالج  یونیورسٹی    کا طلباء اور اساتذہ کی صحت کے حوالے سے اہم فیصلہ،  جی سی یونیورسٹی  کے وائس چانسلر نے  میٹھے کے استعمال پر پابندی عائد کردی۔  جی سی یونیورسٹی کی انتظامیہ نے پابندی کا نوٹیفکیشن جاری کردیا۔ نوٹیفکیشن کے مطابق  یونیورسٹی کے اندر میٹھے پر مکمل پابندی ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں۔ https://lahoretoday.pk/new-notification-to-stop-sexual-harassments-in-school/

 یونیورسٹی نے  بسکٹس ، چینی ، کولڈڈرنکس سمیت تمام میٹھی اشیاء پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ میٹھی اشیا کی بجائے پھل  اور تازہ جوس کا استعمال کیاجائے ۔  وائس چانسلر  کا کہناہے کہ پابندی کا مقصد  صرف اور صرف طلباء  اور اساتذہ  کو صحت مند رکھنا  ہے۔ شوگر کے مرض کی بڑی  وجہ  زندگی  میں میٹھے کا استعمال ہے۔  صحت مند  دماغ کیلئے صحت مند جسم ہونا لازم ہے۔ صحت مند انسان  ہی بہتر  طریقے سے تعلیم   حاصل کرسکتا ہے اور نئی ایجادات کرسکتاہے۔     واضح رہے کہ گزشتہ روز پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن  کا سکولوں مین اینٹی ہراسمنٹ پالیسی نافذ کردی  گئی ہے ، جس  کے باعث بچوں کو چومنے پر پابندی  عائد کردی گئی ہے۔ سکولوں میں جنسی لگاؤ کے برتاؤ کا اظہار  کرنا بھی ہراسگی تصور  کیا جائے گا۔ تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم بچوں کو جنسی استحصال  سے متعلق تربیت دینا  لازمی قرار دیا۔  پنجاب ایجوکیشن انڈومنٹ فاؤنڈیشن   حکام  نے پارٹنر سکولوں  کو اولین ترجیحی بنیادوں پر  مڈل   کلاس میں طلبہ و طالبات   کیلئے الگ الگ کمرہ جماعت بنانے  کی ہدایت کی گئی ہے۔ پالیسی کے مطابق  سکول انتظامیہ    کے عملے  پر اکیلے میں بچوں   سے ملاقات پر بھی پابندی عائد  کی گئی ہے۔   سکول  انتظامیہ اور سربراہان کو پابند کیا گیا ہے کہ  وہ کمرہ جماعت  کی حدود میں سی سی ٹی وی کیمرہ  نصب کریں  اور مانیٹرنگ  کے   نظام کو بہتر کریں اور بچوں کے تحفظ کو  یقینی بنائے۔  پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن  سے الحاق تعلیمی اداروں  کو  اینٹی ہراسمنٹ پالیسی پر مکمل عمل  درآمد  کی ہدایت جاری کی گئی ہے۔

Read Previous

یوم یکجہتی کشمیر بھرپور طریقے سے منانے کی ہدایت

Read Next

خواجہ سرا کو پی پی ایس سی کے ذریعے اساتذہ کی نوکری دینے کا فیصلہ

تبصرہ کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے