سورج گرہن کا حاملہ خواتین اور معذور بچوں پر کیا اثر ہوتا ہے۔ دیکھئے سائنس اور علماء کی آراء

کل ملک بھر میں سورج گرہن ہوگا۔
محکمہ موسمیات کے مطابق سورج گرہن صبح 8 بجکر 46 منٹ پر شروع ہو گا۔ 11 بج کر 40 منٹ پر مکمل سورج گرہن ہو گا۔
دوپہر 2 بج کر 34 منٹ پر اختتام ہوگا۔
لاہور شہر میں سورج گرہن کا دورانیہ 3گھنٹے21 منٹ ہوگا۔
لاہور میں سورج گرہن کا آغاز صبح 09:49پر ہوگا اور اختتام دوپہر 01:10 پر ہوگا۔
محکمہ موسمیات کے مطابق سورج گرہن پاکستان بھر میں دیکھا جا سکے گا۔
سورج گرہن کا آغاز سے اختتام کا دورانیہ 6 گھنٹے 12 منٹ پر محیط ہو گا جس کے دوران چاند سورج کو مکمل طور پر ڈھک دے گا ۔
سورج کے گرد انگوٹھی نما ہالہ بنے گا اور درمیان میں مکمل تاریکی ہو گی جس کے سبب ملک کے بیشتر شہروں میں دن کے وقت اندھیرا چھا جائے گا۔

سورج گرہن کے حوالے سے جہاں سائنسی ماہرین اور علمائے کرام مختلف رائے رکھتے ہیں وہیں دنیا کے مختلف حصوں میں اس حوالے سے توہم پرستی سے بھی جڑی بہت سی چیزیں پائی جاتی ہیں جن پر لوگ آج بھی یقین رکھتے ہیں۔
لوگوں میں یہ عقیدہ پایا جاتا ہے کہ سرج گرہن حاملہ خواتین کے لیے نقصان دہ ہوتا ہے جبکہ سائنس یا اسلام میں اس حوالے سے کوئی دلیل موجود نہیں ہے
ایک اور عقیدہ یہ بھی پایا جاتا ہے کہ سورج گرہن کے دوران ذہنی معذور بچوں کو کھلے میدان میں مٹی میں دبانے سے ان کی ذہنی معذوری ٹھیک ہوجاتی ہے
ایسا کرنے سے کسی کی معذوری ٹھیک ہونے کے شواھد سامنے نہیں آسکے ہیں۔ البتہ لوگ اب بھی یہ عمل دہراتے ہیں
سائنس کہتی ہے کہ سورج یا چاند گرہن ایک سائنسی عمل ہے اس سے کسی کی زندگی پر کوئی اثر نہیں پڑتا جب کہ علمائے کرام کی بھی یہی رائے ہے کہ سورج یا چاند گرہن سے کسی کی زندگی یا موت کا کوئی تعلق نہیں ہے، بلکہ یہ اللہ کی نشانیوں میں سے ایک نشانی ہے۔
علمائے کرام کا کہنا ہے کہ حضور ﷺ سورج یا چاند کو گرہن لگنے کے دوران نوافل ادا کرتے تھے اور اسی مناسبت سے لاہور کی مختلف مساجد میں سورج گرہن کے وقت نمازِ کسوف کے اجتماعات کا اہتمام کیا جارہا ہے۔
ماہرینِ فلکیات نے شہریوں کو سورج گرہن کے دوران احتیاط برتنے کی ہدایات کی ہیں۔
ماہرین کا کہنا ہے کہ شہری سورج گرہن کو براہ راست نہ دیکھیں، ایسا کرنے سے اندھے پن کا شکار ہوا جا سکتا ہے،۔
البتہ اسے حفاظتی چشمہ لگا کر دیکھا جا سکتا ہے تاہم اس میں بھی احتیاط بہت ضروری ہے۔

Read Previous

سورج گرہن، توہمات اور سائنسی و اسلامی حقائق

Read Next

لاہور میں سورج گرہن کا وقت

تبصرہ کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے