لاہور تین سال میں مکمل سمارٹ سٹی بنایا جائے گا، پنجاب حکومت

سمارٹ سٹی

لاہور تین سال میں مکمل سمارٹ سٹی بنایا جائے گا، پنجاب حکومت

حکومت پنجاب نے لاہو رکو پاکستان کا پہلا سمارٹ سٹی بنانے کا فیصلہ کرلیا۔ ہر شہری کے لیے تمام سرکاری سہولیات موبائل پر دستیاب ہوگی۔  ڈاکٹر کی بکنگ سے لیکر پارکنگ تک کی بکنگ موبائل پر ہوگی۔ سمارٹ سٹریٹ لائٹس نصب کی جائیں گی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور بین الاقوامی ترقی یافتہ شہروں کی طرز پر سمارٹ سٹی ہوگا جس میں ہر شہری کے لیے تمام تر سہولیات موبائل پر دستیاب ہوں گی۔ لاہور کو سمارٹ سٹی بنانے کا ٹائم فریم اور پلاننگ کمیشن تیار کرلیا گیا۔ محکمہ بلدیات اور پی آئی ٹی بی بورڈ شہر کو سمارٹ سٹی بنائیں گے۔

اس منصوبے کے لیے سالانہ 85 کروڑروپے کے بجٹ کا تخمینہ لگایا گیا ہے ۔ یہ منصوبہ منظوری کے لیے ارسال کردیا گیا ہے۔

 سمارٹ سٹی کے تحت کیے جانے والے اقدامات میں آن لائن پارکنگ اور آن لائن سرکاری ڈاکٹر کے بکنگ تک  کی سہولت ہوگی۔ سمارٹ سٹی کے تحت لاہور کے سنٹرل ایریاز میں جانے کے لیے فیس مقرر ہوگی جبکہ سنٹرل شہر میں داخلے کے لیے اوقات کار مقرر کیے جائیں گے۔

لاہور کے سنٹرل ایریاز میں جانے کے لیے فیس مقرر ہوگی جبکہ سنٹرل شہر میں داخلے کے لیے اوقات کار مقرر کیے جائیں گے۔

https://lahoretoday.pk/ease-lockdown/یہ بھی پڑھیں

سمارٹ سٹی کے تحت شہریوں کے لیے فرسٹ ایڈ ایپ بنادی جائے گی۔بجلی اور گیس کے بلوں کی ادائیگی سرکاری ایپ سے ہوگی۔ سرکاری سطح پر شہریوں کے لیے پورٹل بنا کر ہر سہولت دی جائے گی۔ شہر میں سمارٹ سٹریٹ لائٹس اور سمارٹ ویسٹ مینجمنٹ ہوگی۔ شہر کی اسٹریٹ لائٹس کو شہریوں کی آمدرورفت سے منسوب کیا جائے گا۔پولیس سے لے کر بزنس تک کی تمام سہولیات ایک سرکاری ڈیش بورڈ پر میسر ہوں گیں۔ پبلک ٹرانسپورٹ کے استعمال کے لیے کارڈ ریچارج کرنے کی سہولت موبائل میں ہوگی۔ حکام کے مطابق پنجاب حکومت 2024 تک لاہور کو سمارٹ سٹی بنانے کے فیز ون کو مکمل کرے  گی۔ سمارٹ سٹی پراجیکٹ کی نگرانی کے لیے کمانڈ اینڈ کنٹرول سنٹر اور ٹیم بھی رکھی جائے گی جبکہ پراجیکٹ پر سالانہ 85 کروڑ روپے سے زائد اخراجات آئیں گے۔

Read Previous

کرونا  کی پابندیاں نرم، ہفتے میں ایک دن چھٹی ہوگی

Read Next

ڈرائیونگ لائسنس ٹکٹ کا نظام ختم، نیا طریقہ رائج

تبصرہ کریں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے